اعتقادی سوالات

۱۔ کیا انبیاء و ائمہ علیہم السلام کی طرح بعض دیگر اشخاص جیسے حضرت زینب اور حضرت ابو الفضل العباس علیہما السلام بھی معصوم ہیں؟ کیا عصمت کے مراتب ہیں؟
جواب: یہ دعویٰ کرنا کہ انبیاء علیہم السلام اور چہاردہ معصوم کی طرح دوسرے بعض حضرات بھی معصوم ہیں؛ باطل ہے۔ ہاں یہ کہا جاسکتا ہے کہ یہ ذوات اپنے نفس کی مالک ہیں اور عمداً گناہ کے مرتکب نہیں ہوئے ہیں۔

 


۲۔ کیا صرف اہل بیت علیہم السلام کی محبت اور ان کے دشمنوں سے نفرت جبکہ ہم دیگر عبادات کی جانب مائل نہ ہوں مفید اور ثمر آور ہے؟
جواب: اہل بیت علیہم السلام کی محبت ایک ایسا عمل ہے جو خود باعث ثواب ہے۔


۳۔ کیا اسمائے الٰہی توقیفی (یعنی منصوص ہیں ہمیں حق نہیں ہے کہ ہم اپنی جانب سے اختراع کریں) ہیں؟
جواب: ہاں اسمائے الٰہی توقیفی ہیں۔


۴۔ کیا رجعت ہمارے مذہب کے اصولوں میں سے ایک اصول ہے؟
جواب: رجعت پر اعتقاد ہمارے مذہب کے مسلمات میں سے ہے۔


۵۔ ایک روایت جو کافی میں مشہور ہے وہ یہ کہ حضرت امیر المومنین علیہ السلام کی خاطر ڈوبا ہوا سورج پلٹا (جسے ردّ الشمس کہا جاتا ہے) آپ سے گذارش ہے کہ اس روایت کے پیش نظر مندرجہ ذیل سوالات کے جوابات عنایت فرمائیں:
الف: کیا اس روایت کی سند معتبر ہے؟
ب: کیا یہ مورد اعادہ معدوم کا مصداق نہیں ہے؟ (اعادہ معدوم یعنی ختم ہوئی چیز کا دوبارہ وجود میں آنا)
ج: تمام ان چیزوں کو قبول کرلینے کے بعد سوال یہ رہ جاتا ہے کہ کیا امام علیہ السلام اپنی نماز میں اس حد تک تاخیر کرسکتے ہیں کہ نماز کا وقت تمام ہوجائے؟

جواب:

الف: سند معتبر ہے۔
ب: اس مورد کا تعلق اعادہ معدوم سے نہیں ہے۔
ج: روایت کے مطابق پیغمبر (ص) کا سر اقدس حضرت امیر المومنین(ع) کی آغوش میں تھا۔ پیغمبر (ص) کی عظمت کو بتانا مقصود تھا شاید اس وجہ سے حضرت(ع) نے نماز میں تاخیر کی۔


۶۔ حضرت امام زمانہ (عج) کی توقیع (وہ فرمان جو امام(ع) کی جانب سے دیا گیا ہو) میں وارد ہوا ہے جسے آپ(ع) نے اپنے چوتھے نائب علی بن محمد سمری سے خطاب کرتے ہوئے فرمایا کہ تمہاری حیات ختم ہونے والی ہے، کسی کو وصیت مت کرنا کیونکہ اب مکمل غیبت (غیبت کبریٰ) کا آغاز ہونے والا ہے، جس میں امام علیہ السلام کا مشاہدہ و دیدار ممکن نہیں ہے ظہور سے پہلے جو بھی مشاہدہ کا دعویٰ کرے اس کی تکذیب کرو۔ اس توقیع کو مدنظر رکھتے ہوئے بیان فرمائیں کہ جو بعض واقعات بعض حضرات کے سلسلے میں ملتے ہیں کہ انہوں نے حضرت کا دیدار کیا یہ کس طرح ممکن ہے؟ کیا یہ دو چیزیں قابل جمع ہیں؟
جواب: اس توقیع میں جس چیز کی نفی ہوئی ہے وہ مشاہدہ ہے ظاہراً مشاہدہ سے مراد وہ دیدار ہے جس میں شخص ملاقات کے وقت حضرت(ع) کو پہچانتا ہو کہ آپ امام(ع) ہیں لیکن وہ دیدار جس میں شخص حضرت(ع) کی زیارت تو کرے لیکن زیارت کے بعد یہ سمجھے کہ آپ امام علیہ السلام تھے اس طرح کے دیدار کی نفی نہیں ہوئی ہے۔
اکثر ملاقاتیں جو نقل ہوئی ہیں وہ مکاشفہ ہیں بعض موجودہ ان واقعات میں مکاشفہ کی جانب تصریح ہوئی ہے تو بعض میں اگر انسان غائرانہ نظر کرے تو مکاشفہ کی علامات صاف نظر آئیں گی۔ ہاں یہ اور بات ہے کہ خود متکلم و ناظر اس امر سے بے خبر ہوتا ہے وہ مکاشفہ کو مشاہدہ سمجھ بیٹھتا ہے۔ بعنوان مثال اس طرح کا ایک واقعہ آپ کی اخدام عالیہ میں ذکر کرتا ہوں:
ایک عالم دین نے مجھ سے نقل فرمایا کہ محمد کوفی نامی ایک شخص کہتا ہے کہ میں نجف اشرف سے کربلا زیارت کو نکلا۔ میں گاڑی کی اگلی نشست پر سوار ہوا، اسی گاڑی کی پچھلی سیٹ پر ایک قبائلی عرب سوار تھا اس نے میرے شانے پر اپنا ہاتھ رکھ دیا میں یہ سوچ کر خاموش رہا کہ یہ امام علیہ السلام کا زائر ہے اس کا ہاتھ میرے شانے پر آخری وقت تک رہا جب میں گاڑی سے اترا اس وقت مجھے درد اور بے حسی کا احساس ہوا اسی اثناء میں میں نے ایک وسیع میدان میں امام علیہ السلام کو دیکھا حضرت(ع) میرے پاس تشریف لائے اور مجھ سے اس طرح حال دریافت فرمایا: کیا تمہارا شانہ درد کررہا ہے؟
میں نے عرض کیا: ہاں۔
آپ(ع) نے اپنا دست مبارک میرے شانے پر پھیرا نتیجتاً درد ختم ہوگیا۔
جب ان عالم دین کی گفتگو ختم ہوگئی میں نے ان سے کہا شاید آپ متوجہ نہیں ہیں اسے دیدار نہیں مکاشفہ کہتے ہیں۔ انہوں نے پوچھا ایسا کیوں؟
میں نے کہا کیونکہ اس زمانے میں وسیع میدان کہاں تھا بلکہ کچھ پر پیچ و خم گلیاں تھیں وہ میری اس گفتگو سے کافی متحیر ہوئے گویا اس طرح کی ابھی انہوں نے خواب سے آنکھیں کھولی ہوں۔ اِس واقعہ کو نقل کرنے کا مقصد یہ تھا کہ وہ واقعات جو بحرینی و بحر العلوم یا ان جیسے معتبر اشخاص کے سلسلے سے نقل ہوئے ہیں انہیں مکاشفہ کہا جائے نہ کہ خواب جسے انسان عام حالات اور عام جگہوں پر دیکھتا ہے۔
اسی وجہ سے بیان کیا گیا ہے: "بین النوم و الیقظۃ" یعنی بیداری اور سونے کی درمیانی حالت۔ جہاں تک مجھے یاد ہے یہ عبارت مرحوم مجلسیؒ کی عبارات میں وارد ہوئی ہے۔


۷۔ کیا حضرت امام زمانہ (عج) سے متوسل اور مرتبط ہونے کے لئے آپ(ع) کے خادم رکن رابع کو واسطہ بنانا ضروری ہے۔
جواب: رکن رابع کے سلسلے سے کوئی دلیل نہیں ملتی حضرت امام زمانہ (عج) سے متوسل ہونے کے لئے ہم کسی واسطہ کے محتاج نہیں ہیں۔

۸۔ کیا یہ سخن صحیح ہے کہ حضرت رسول اکرم (ص) پر نماز کی حالت میں سہو کی کیفیت طاری ہوئی؟
جواب: اس سلسلہ میں روایت وارد ہوئی ہے جسے شیخ صدوق علیہ الرحمہ قبول فرماتے ہیں لیکن مشہور اس چیز کو قبول نہیں کرتے۔


۹۔ کیا جنوں کا ارتباط انسانوں سے اس طرح ہوسکتا ہے کہ وہ انسانوں کو نقصان پہنچائیں اور ان سے ہمبستر ہوں۔
جواب: نقصان پہنچا سکتے ہیں لیکن یہ کہ وہ ازدواج اور ولادت کا سبب بنیں مشکل ہے۔

۱۰۔ کیا آیت تطہیر حضرات ائمہ علیہم السلام کی ظاہری طہارت پر دلالت کرتی ہیں نتیجتاً آپ حضرات کا خون پاک ہے؟ علمائے شیعہ کا اس سلسلہ میں کیا نظریہ ہے؟
جواب: اس طرح کی آیات درحقیقت ان حضرات کے مقام والا کو بیان کرتی ہے اور آپ حضرات کے شان و مقام سے مربوط ہیں نہ طہارت ظاہری سے۔
ان حضرات کو دیکھا گیا ہے کہ آلودگی کی صورت میں کثافت کو بدن سے زائل فرماتے تھے۔

 

سوال نمبر١۔ ائمہ اطہار علیہم السلام کے لئے سینہ زنی کرنے کی دلیل کیا ہے؟
جواب: ائمہ اطہار علیہم السلام کے بارے میں عزاداری کرنے کا رجحان اور استحباب ہونا انجمن میں اور مصائب امام حسین پر سینہ زنی کرنا عزاداری برپا کرنا کسی سے پوشیدہ نہیں ہے قرآن مجید میں ذکر ہوا ہے کہ حضرت یعقوب اپنے بیٹے یوسف کے فراق میں بہت عرصہ تک گریہ کرتے رہے کیا یہ بعنوان ایک عمل انسانی اور عاطفی طور پر بیان کرتے ہیں اس بنا پر ائمہ اطہار علیہم السلام کے پیروکار جس طریقے سے جو شرعاً جائز ہے اگر مجالس برپا کریں یا نذر کریں پس مجالس امام حسین پر سینہ زنی کرنا، امام حسین کی مظلومیت کو مجسم کر کے دکھاتے ہیں اور زیادہ سے زیادہ امام حسین سے محبت کرنا یہ ہمارے شعائر مذہب میں شمار ہوتا ہے لہٰذا تذکر دیتے ہیں کہ جیسا ابھی تک مرسوم ہے بزرگان مؤمنین کو خداوند عالم ان کی توفیقات میں اضافہ کرے اور مجالس دینی اور مذہبی تقریروں کو زیادہ اہمیت دینا چاہیے اور ایام محرم الحرام صرف عزاداری پر کفایت نہ کریں۔

سوال نمبر٢۔ عزاداری، سینہ زنی و زنجیر کرنا یا اس کے ذریعہ جم رنگ بدل جائے یا زخم ہوجائے حتی کہ خون جاری ہوجائے آیا جائز ہے؟
جواب: اس سوال کا جواب یہ ہے جواب اول سے معلوم ہوتا ہے البتہ عزاداران گرامی خداوند عالم ان کی توفیقات میں اضافہ کرے جہات شرعی اور عقلائی کی رعایت کریں اگرچہ خون نکالنے کا حرام ہونے پر کوئی دلیل نہیں ہے۔


سوال نمبر٣۔ مردوں کا نامحرم عورتوں کے مقابل میں ننگا ہونا جائز ہے یا نہیں ہے یا لوگوں کو جلب کرنے کے لئے اپنے آپ کو مار دیتے ہیں اس کا کیا حکم ہے؟
جواب: بہتر یہ ہے کہ بلکہ بعض موارد میں لازم میں ہے کہ عزاداری کرنے والے ننگے نہ ہوں اور ننگے ہونے کی حالت میں عزاداری نہ کریں بالخصوص اس مجالس میں جس میں خواتین دیکھ رہی ہیں اور اپنے آپ کو مارنے سے اجتناب کریں۔

 

سوال نمبر٤۔ ریا کے طور پر سینہ زنی و زنجیر زنی کرنا جائز ہے یا نہیں؟
جواب: ائمہ اطہار کے لئے عزاداری کرنا عبادت ہے اور ریا کاری عمل کو باطل کردیتی ہے پس کوشش کریں کہ قصد قربت کے ساتھ عزاداری کریں۔

 

سوال نمبر٥۔ مراسم عزاداری میں پرسہ دینا اور شبیہ نکالنا جائز ہے یا نہیں اور جائز ہونے کی صورت میں مردوں کے لئے عورتوں کا لباس پہننا اور ڈول باجا بجانا جائز ہے یا نہیں؟
جواب: پرسہ دینا اور شبیہ نکالنا خود ایک ایسا کام ہے کہ شرعاً جائز ہے لیکن بنابر احتیاط مرد لوگ عورتوں کے لباس پہننے سے پرہیز کریں اور آلات موسیقی جو مخصوص مجالس لہو و لعب ہیں، اس کا مجالس عزاداری میں استعمال کرنا حرام ہے۔


سوال نمبر٦۔ نمایش اور عزاداری کے پرسہ میں اہل بیت علیہم السلام کے ساتھ تشبیہ دینا جائز ہے یا نہیں؟
جواب: اگر کوئی تشبیہ دینے سے ائمہ اطہار کی بے حرمتی ہوتی ہے اور ان پر نقص لازم آتا ہے تو حرام ہے۔


سوال نمبر٧۔کیا ماتم کرنا پرسہ دینے کے ساتھ فرق ہوتا ہے جبکہ دونوں رلانے کیلئے ہے؟
جواب: اگرچہ اصل میں پرسہ دینا ماتم کرنا جائز ہے لیکن ائمہ اطہار کے بارے میں ماتم کرنا ایک امر جو معصوم سے نقل ہوا ہے چنانچہ امام رضا نے دعبل خزاعی کو بتایا ہے۔


سوال نمبر٨۔کالا لباس پہننا امام حسین اور دوسرے ائمہ اطہار کی عزاداری میں کیا رجحان شرعی رکھتا ہے؟
جواب: کالا لباس پہننا عزاداری امام حسین میں اور اپنے رشتہ دار کی مصیبت میں ایک رسم ہے اوریوم عاشورائے امام حسین میں اظہار غم کے لئے بہتر ہے۔


سوال نمبر٩۔کیا پرسہ دینا اور حضرت زینبۖ کو اور امام سجاد کو بیمار بتانا اور مٹھائی پھینکنا اور باجا بجانا وغیرہ کا کیا حکم ہے۔
جواب: عزاداری امام حسین میں یا پرسہ دینے میں کوئی ایسا عمل کرنا جو ان کے مقام میں حقیر سمجھا جائے اور آلات موسیقی کا استفادہ کرنا اور مٹھائی پھینکنا مجالس عزاداری کی مناسب نہیں ہے لہٰذا ایسے اعمال جائز نہیں ہیں۔


سوال نمبر١٠۔کالے لباس کے ساتھ عزاداری امام حسین کے دوران میں نماز پڑھنا مکروہ ہے یا نہیں؟
جواب: عزاداری کے دوران میں کالے لباس کے ساتھ نماز پڑھنے میں کوئی حرج نہیں ہے، لیکن بعض روایات سے معلوم ہوتا ہے کہ ایام عزاداری میں کالے لباس کا پہننا مکروہ نہیں ہے۔


سوال نمبر١١۔مراسم عزاداری اہل بیت میں جو علامات دیکھتے ہیں اس کے حکم کیا ہیں؟
جواب: ہماری نظر میں وہ علامتیں جو صلیب کی شکل میں ہیں خصوصاً وہ چیزیں جس پر حیوانات کے نقشے بنے ہوئے ہیں اشکال سے خالی نہیں ہیں لیکن وہ پرچم جو قدیم زمانے سے مرسوم ہے اس میں کوئی شکال نہیں ہے۔


سوال نمبر١٢۔عزاداری میں ڈھول بجانا اور باجا وغیرہ کا استفادہ کرنا جائز ہے یا نہیں؟
جواب: ان چیزوں کا مراسم عزاداری میں استعمال کرنا بلکہ مطلقاً غیر عزاداری میں بھی استعمال کرنا اشکال سے خالی نہیں ہے۔


سوال نمبر١٣۔انجمن اور عزاداری کے دستے میں وسائل موسیقی سے استفادہ کرنا کیا حکم رکھتا ہے؟
جواب: اس سوال کا جواب سوال پنجم کے جواب میں مذکور ہے۔


سوال نمبر١٤۔ایام سوگواری اہل بیت اور امام حسین کے دوران نماز مقدم یا عزاداری؟
جواب: البتہ نماز مقدم ہے کیونکہ نماز واجب ہے اور ارکان دین اسلام میں سے ہے لیکن عزاداری مستحب ہے اور واجب کو مستحب کے ساتھ مقائسہ نہیں کرنا چاہیے۔


سوال نمبر١٥۔بعض مجالس و محافل میں خواتین کی آواز مردوں تک پہنچ جاتی ہے کیا یہ عمل جائز ہے یا نہیں؟
جواب: اگر یہ عمل ریبہ اور سننے والوں کے لئے لذت نہیں ہے تو حرام نہیں ہے لیکن خداوند عالم نے فرمایا: وَِذَا سََلْتُمُوہُنَّ مَتَاعًا فَاسَْلُوہُنَّ مِنْ وَرَائِ حِجَابٍ (١) اگر عورتوں سے کوئی چیز مانگے تو پردہ کے پیچھے سے مانگے لازم ہے کہ خواتین کی مجالس میں ہوگا مجالس عزاداری میں خواتین کی عفت کی رعایت کرے تاکہ ان کی آواز مرد لوگ نہ سنیں۔


سوال نمبر١٦۔مرثیہ پڑھنے والے کو اپنے اشعار کے درمیان بغیر مدرک والے مطالب ذکر کرتے ہیں اور غنا کے ساتھ پڑھتے ہیں کیا اس کو پیسہ دینا جائز ہے یا نہیں اور کیا اجل عزاداری اس کا اخلاف کے ضمن میں حرام ہوتا ہے یا نہیں؟
جواب: بے مدرک مطالب اور غلط و اشعار غنائی کے مقابل میں پیسہ دینا صحیح نہیں ہے (١) احزاب آیت ٥٣۔ لیکن اصل عزاداری اپنے اعمال کے ساتھ حرام نہیں ہوتا ہے البتہ مسلمان لوگ مرثیہ وغیرہ پڑھتے وقت مطالب واقعی اور صحیح پڑھنا چاہیے۔


سوال نمبر١٧۔خیمہ بنانا اور اس کو آگ جلانا صحیح ہے یا نہیں؟
جواب: مال کے ضایع ہونے کو لحاظ کرے تو یہ اشکال سے خالی نہیں ہے لیکن اگر کوئی آثار شرعی اور تبلیغی رکھتا ہو تو جائز ہے بلکہ ایک اچھا کام اور مطلوب ہے۔

 

سوال نمبر١٨۔کپڑا اور رومال وغیرہ ایام محرم میں علامت کے طور پر باندھتے ہیں کیا یہ بیچنا اور اس کی قیمت مسجد اور امام بارگاہ کی تعمیر میں خرچ کرنا جائز ہے یا نہیں؟
جواب: اگر کوئی شخص کپڑا اور رومال وغیرہ باندھتا ہے لیکن اس کا کوئی خاص نظر نہیں ہے تو ان موارد میں خرچ کرنا جائز ہے۔
سوال نمبر١٩۔مراسم عزاداری اور محفل وغیرہ شوہر کی اجازت کے بغیر برپا کرنا کیا حکم رکھتا ہے؟
جواب:اگر حق شوہر کے ساتھ کوئی منافات نہیں رکھتا ہے اور عورت اپنی منزل میں جو شوہر کے ساتھ مربوط نہیں ہے اس میں عزاداری اور محفل برپا کرے تو اشکال نہیں ہے۔

 

سوال نمبر19۔تالی بجانا مراسم محفل میلاد ائمہ اطہار علیہم السلام میں اور اعیاد مذہبی مسجد میں برپا کرنا اور مسجد کے باہر برپا کرنا کیا حکم رکھتا ہے۔
جواب: تالی بجانا اصل میں حرام نہیں ہے لیکن مناسبات مذہبی میں خصوصاً مساجد میں ان کی حرمت کی رعایت کرنے کے لئے ان چیزوں سے اجتناب کرے۔ والسلام علیکم و رحمة اللہ و برکاتہ

VTEM IMAGE ROTATOR VTEM IMAGE ROTATOR VTEM IMAGE ROTATOR VTEM IMAGE ROTATOR VTEM IMAGE ROTATOR VTEM IMAGE ROTATOR VTEM IMAGE ROTATOR VTEM IMAGE ROTATOR VTEM IMAGE ROTATOR VTEM IMAGE ROTATOR VTEM IMAGE ROTATOR